میں سفر میں تھا میں سفر میں ہوں

Image may contain: one or more people, people standing, ocean, sky, twilight, outdoor, water and nature


میں سفر میں تھا میں سفر میں ہوں
مجھے قربتوں کی خبر کہاں

جسےمنزلوں کی خبرنہیں
اسے راستوں کا پتہ کہاں

میرے بے خبر تجھے خبر ہی کہاں کہ بچھڑ گیا تجھ سےکون کہاں
تجھے اپنی زات عزیز ہے تجھے دوستوں کی خبر کہاں

تو یقین ہے تو میں گُمان ہوں 
توعروج ہے میں تو زوال ہوں

میری جاناں ہمارا رشتہ آٹوٹ ہے
ہمیں فاصلوں کی خبر کہاں

یونہی کٹ گئے میرے روزوشب 
تجھے کیسے کوئی بتائے اب
تیرے ہجر میں ملے مجھے جو دکھ تجھے ان دُکھوں کی خبر کہاں

فرخؔ مجھے تجھ سے کوئی گلہ نہیں مجھے ہی حوصلہ ملا نہیں
میرے مہرباں تجھے بھلا میری خواہشوں کی خبر کہاں...

بقلم: فرخؔ اقبال

میں سفر میں تھا میں سفر میں ہوں میں سفر میں تھا میں سفر میں ہوں Reviewed by Farakh Iqbal on May 03, 2018 Rating: 5
Powered by Blogger.